چینی حکام نے ملک میں داخلے اور باہرجانے سے متعلق جھوٹی رپورٹس کو مسترد کردیا

چین کے دارالحکومت بیجنگ میں کیپٹل انٹرنیشنل ایئرپورٹ پرتیکنیکی عملہ فیری ٹرمینل چیک پوائنٹس پر مسافروں کے لیے ای چینلز آلات کو ایڈجسٹ کررہا ہے۔(شِنہوا)

بیجنگ(شِنہوا) چین کی نیشنل امیگریشن ایڈمنسٹریشن (این آئی اے) نے بارڈرکنٹرول کے طریقوں سے متعلق غیر ملکی  میڈیا کی جھوٹی رپورٹس کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس طرح کی افواہوں کا مقصد ملک میں داخل اور باہرجانے کی پالیسیوں کو مسخ اور بدنام کرنا ہے۔

حال ہی میں، کچھ  غیر ملکی میڈیا  اداروں نے غلط معلومات کوبڑھا چڑھا کر پیش کیا جن میں بتایا گیا کہ چین نے اپنے شہریوں کو پاسپورٹ کا اجراء معطل کر دیا ہے، یا عوام کو ملک چھوڑنے سے روک دیا ہے۔

این آئی اے کے ترجمان نے جمعہ کو کہا کہ اس طرح کی غلط معلومات کا مقصد ملک کے داخلے اور باہر جانے کے قانونی،ٹارگٹڈ اورموثر انتظامی اقدامات کو کمزور کرنا ہےجو باضابطہ طور پر کوویڈ-19ردعمل کے طریقوں کو برقرار رکھنے کے پس منظر میں متعارف کرائے گئے تھے۔

ترجمان نے کہا کہ امیگریشن انتظامیہ نے کوویڈ-19کے آغاز کے بعد سے باہر سے آنے والے کیسز اوراندرون ملک وبا کو دوبارہ سراٹھانے سے روکنے کے لیے حکمت عملی کا  مضبوطی سے نفاذکیا ہے، جس سے ملک میں داخل ہونے والوں یا باہر جانے والوں کی وجہ سے وبا کے خطرے کو موثر طریقے سے کم کیا گیا ہے۔