امریکی جج نے وفاقی ملازمین کے لیے ویکسین کی لازمی شرط کے خلاف حکم امتناع دے دیا

ہیوسٹن(شِنہوا) امریکی ریاست ٹیکساس  کے ایک وفاقی جج نے صدر جو بائیڈن کے وفاقی ملازمین کے لیے لازمی ویکسین کے اقدام کو روک دیاہے،جس سے وائٹ ہاؤس کی انسداد کوویڈ-19 کی کوششوں کو ایک اور دھچکا لگا ہے۔

امریکی محکمہ انصاف نے وفاقی جج کے اس فیصلے کے خلاف  فوری  اپیل دائر کی۔ اس فیصلے کے خلاف اپیل کی سماعت سپریم کورٹ کر سکتی ہے۔

سابق ریپبلکن صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ٹیکساس کے جنوبی ضلع کی ڈسٹرکٹ کورٹ میں تعینات کیے گئے  جج جیفری براؤن کے  ملک بھر میں لاگو اس حکم امتناعی میں کہا گیا ہے کہ ویکسین کو لازمی  قرار دینا صدر کے اختیار سے تجاوز  ہے۔

براؤن نے  فیصلے میں  لکھا کہ کیا صدر، اپنے قلم کے زور سے اور کانگریس کی رائے کے بغیر، لاکھوں وفاقی ملازمین سے انکی ملازمت کی شرط کے طور پر طبی طریقہ کار سے گزرنے کا تقاضا کر سکتے ہیں۔