امریکی ایوان نے کانگریس میں ہونے والے فسادات کی تحقیقات کیلئے آزاد کمیشن کے قیام کی منظوری دیدی

واشنگٹن(شِنہوا) امریکی ایوان نمائندگان نے 6 جنوری کو کانگریس کی عمارت میں ہونے والے فسادات کی تحقیقات کے لئے ایک آزاد کمیشن کے قیام کے بل کی منظوری دے دی ہے۔

نائن الیون کمیشن کے بعد اسی طرز پر اس تحقیقاتی کمیشن کے قیام کے لئے ارکان نے پارٹی پالیسی کے مطابق ووٹ دیا اورری پبلکن پارٹی کے منحرف35 ارکان نے 217 ڈیموکریٹ ارکان کا ساتھ دیا۔

اس بل کو اب سینیٹ میں  بھیجا جائے گا ، جہاں ریپبلکن رہنما  مِک میک کونل نے کہا ہے کہ وہ  اس اقدام کی مخالفت کرتے ہیں،  جس سے بل کے قانون بننے پر مزید شکوک و شبہات پیدا ہوگئے ہیں ،قانون سازی میں تاخیر سے بچنے کے لئے  کم از کم ریپبلکن  کے10  سینیٹرز کی منظوری درکار ہوگی۔میک کونل نے یہ نہیں کہا کہ وہ اس بل کے خلاف اپنے پارٹی کے ساتھی ارکان کوپابند کریں گے۔

بل جس پر ایوان کی ہوم لینڈسکیورٹی کمیٹی کے چیئرمین  ریاست مسی سیپی کے ڈیموکریٹ  رکن بینی تھامسن اور نیویارک سے ریپبلکن کے رکن  جان کاٹکو نے تبادلہ خیال کیا کے تحت کمیشن  10 ارکان پر مشتمل ہوگا جو کانگریس  کے موجودہ رکن نہیں ہوں گے۔