چینی وزیر خارجہ کا آسیان پر مبنی ترقی کے پلیٹ فارم کے کردار پر زور

چین کے ریاستی کونسلراور وزیر خارجہ وانگ یی پنوم پن میں آسیان علاقائی فورم کے وزرائے خارجہ اجلاس کے موقع پرترک وزیر خارجہ میولود چاوش اولو سے ملاقات کرتے ہوئے۔(شِنہوا)

پنوم پن (شِنہوا) چین کے ریاستی کونسلراور وزیر خارجہ وانگ یی نے ایشیا پیسفک خطے میں امن، استحکام اور ترقی کو برقرار رکھنے کے لیے آسیان پر مبنی تعاون کے پلیٹ فارم کے کردار پر زور دیا ہے۔

 کمبوڈیا کے دارالحکومت پنوم پن میں 29ویں آسیان علاقائی فورم کے وزرائے خارجہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وانگ نے کہا کہ موجودہ حالات میں امن و استحکام برقرار رکھنے اور مشترکہ سلامتی کے فروغ کے لیے علاقائی ممالک کی خواہشات تبدیل نہیں ہوئیں ، ان کی اقتصادی بحالی کو تیز کرنے اور پائیدار ترقی کے حصول کی لگن پہلے جیسی ہے  اور یکجہتی اور تعاون کی کوششیں  اور مشکل وقت سے نمٹنے کے لیے ایک دوسرے کے ساتھ چلنے کا جذبہ بھی تبدیل نہیں ہوا۔

 چینی وزیر خارجہ نے ایشیا بحرالکاہل کے خطے میں امن، استحکام اور ترقی کو برقرار رکھنے میں آسیان پر مبنی تعاون کے پلیٹ فارم کے کردار کو مکمل طور پر ادا کرنے کے لیے تین تجاویز پیش کیں۔ ان میں سب سے پہلے  یہ کہ  اقوام متحدہ کے چارٹر اور بین الاقوامی قانون کی صحیح معنوں میں پاسداری کی جائے۔ علاقائی ممالک  اقوام متحدہ کے ساتھ بین الاقوامی نظام کو اس کی بنیاد پر  اور بین الاقوامی قانون کے تحت بین الاقوامی نظام کو برقرار رکھیں، بجائے اس کے کہ کسی فرد ملک یا ممالک کے ایک بلاک کے نام نہاد "ہاؤس رولز” کو دیگر ممالک پر مسلط کرنے کے لیے ان کی حمایت حاصل کرنے کے لیے ان پر دباؤ ڈالاجائے۔

 دوسرا یہ کہ ہر فریق کے مفادات کو مدنظر رکھا جائے۔ وانگ نے اتحاد، باہمی تعاون اوردنیا بھر میں عوامی ضروریات کے سامان کی فراہمی پر زور دیا۔

 اپنے مفادات کے لیے ، وانگ نے کہا، ایک ملک کو دوسرے ممالک کی ترقی کی ضروریات کا احترام کرنا چاہیے اور اپنی ترقی کوحاصل کرتے ہوئے خطے کی مشترکہ ترقی کو فروغ دینا چاہیے۔