ادارے ایک دوسرے کے ساتھ ملکر کام کریں تاکہ ہم آہنگی پیدا ہوسکے، خواجہ سعد رفیق

اسلام آباد/لاہور(آئی این پی) وفاقی وزیر برائے شہری ہوابازی خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ ادارے ایک دوسرے کے ساتھ ملکر کام کریں تاکہ ہم آہنگی پیدا ہوسکے،اداروں کے مسائل کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پی آئی اے اور سول ایوی ایشن میں مطالبات ہی مطالبات ہیں جبکہ کام بہت کم نظر آتا ہے،جو لوگ محنت سے کام کریں گے، انہیں محنت کا پھل ملے گا۔خواجہ سعد رفیق نے اعلان کیا کہ مرکزی رن وے آپریشنل ہوگیا ہے،پی آئی اے کے بارے میں انہوں نے کہا اس میں بہتری کی بہت گنجائش ہے۔ جو کام نہیں کرے گا،اس کی ادارے میں کوئی جگہ نہیں، گزشتہ حکومت نے اپنے لوگوں کو بہت نوازا ہے ۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ پی آئی اے میں اب ہونے والی بھرتیوں میں میرا کوئی عمل دخل نہیں۔ ،پی آئی اے کو آئندہ 4سے5 سالوں میں مزید محنت کرنی ہوگی تاکہ پی آئی اے اپنے پیروں پر کھڑا ہوسکے ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتہ کے روز علامہ اقبال انٹر نیشنل ایئر پورٹ میں مرکزی رن وے کی اپ گریڈیشن مکمل ہونے کے حوالے سے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری سول ایوی ایشن شوکت علی ،ڈائریکٹر جنرل سول ایوی ایشن خاقان مرتضی ، ڈی جی اے ایس ایف میجر جنرل عابد لطیف، ایم ڈی نیسپاک ظاہر لطیف ،پی آئی اے و سول ایوی ایشن افسران بھی موجود تھے ، قبل ازیں ڈائریکٹر جنرل سول ایوی ایشن خاقان مرتضی اور ایم ڈی نیسپاک نے مذکورہ رن وے اپ گریڈیشن کے حوالے سے وفاقی وزیر کومکمل بریفنگ دی،خواجہ سعد رفیق نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ پانچ ایئر بسسز کی سیٹیں تبدیل کرنے کیلئے پی آئی اے کو فنڈز مہیا کئے جاچکیہیں،777بوئنگ طیارہ ایک سال سے گرائونڈ تھا جو آج فنکشنل ہوجائیگا،سکھر اور ڈیرہ اسماعیل خان ایئر پورٹ کو عالمی معیار کا بنایا جارہا ہے ،انہوں نے کہا کہ ہم پوری کوشش کررہے ہیں کہ اپنے انٹر نیشل روٹس کو کھلوائیں،لاہور ایئر پورٹ پر آئندہ 5 سال میں 5ارب کی سرمایہ کاری آئے گی، ہم کوشش کررہے ہیں کہ امریکہ اور یوکے کی فلائیٹس جلد بحال ہوں ،وفاقی وزیر نے کہا کہ اگر ہم میرٹ پر بھرتی کریں گے تو نتیجہ دینا اس کی ذمہ داری ہے ، 5ایئر بسوں کی حالت انتہائی خراب ہوچکی ہے جن کی جدید ترین خطوط پر دوبارہ مرمت کی جائے گی جبکہ دو777جہازوں کی بھی نئے سرے سے تزئین وآرائش کی جائے گی جس میں 6سے 8ماہ لگیں گے اور اس کیلئے بھی بہت سی رقوم درکار ہوگی، انہوں نے کہا کہ مزید 4نئے جہاز بھی شامل کئے جارہے ہیں اورپرانے جہازوں کی دیکھ بھال کرکے ان کو قابل استعمال بنایا جارہا ہے،انہوں نے کہا کہ پاکستان کو تمام ایئر پورٹس پر کسٹم اور ایف آئی اے کے قائم کائونٹرزپر مزید اہلکاروں کی ضرورت ہے ، اس سلسلے میں ڈی جی ایف آئی اے سے بات کریں گے تاکہ لوگوں کی مشکل مزید آسان ہو، اے ایس ایف کے مسائل کا بھی اندازہ ہے ،انہوں نے کہا کہ علامہ اقبال انٹر نیشل ایئر پورٹ اہم ایئر پورٹ ہے جو ایئر ٹریفک کے حوالے سے مصروف ایئر پورٹ ہے ،حکومت سول ایوی ایشن ، پی آئی اے اور ایئر پورٹ ترقی اور اس کو بہتر کرنے کیلئے تمام انفراسٹرکچر کا جائزہ لے رہی ہے،انہوں نے کہا کہ علامہ اقبال انٹر نیشل ایئر پورٹ کے مین رن وے کی اپ گریڈیشن سے 380اے ایئر کرافٹ سمیت دیگر بین الاقوامی ایئر ٹریفک کو کنٹرول کرنے میں مدد ملے گی،انہوں نے کہا کہ وہ یقین دلاتے ہیں کہ ہم سب ملکر سول ایوی ایشن کو مزید بہتر کریں گے اور پرائیویٹ ایئر لائنز کو بھی مزید سہولیات اور مواقع فراہم کریں گے،اس موقع پر وفاقی وزیر شہری ہوابازی خواجہ سعد رفیق کو سیکرٹری سول ایوی ایشن اور ڈی جی سول ایویشن نے یادگاری شیڈل بھی پیش کی۔