مضبوط تعلیمی روابط بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کو مضبوط بنائیں گے،بی آر آئی فورم کے ویبینار سے تعلیمی ماہرین کا خطاب

اسلام آباد(آئی این پی)انسٹیٹیوٹ آف پیس اینڈ ڈپلومیٹک اسٹڈیز کے کے تحت فرینڈز آف بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو(بی آر آئی)فورم نے بی آر آئی ممالک کے اندر تعلیمی رابطوں کے بارے میں ایک ویبنار کا اہتمام کیا جس میں دنیا کے مختلف ممالک کے ممتاز مقررین نے اپنی رائے کا اظہار کیا،ماہرین تعلیم کا کہنا تھا کہ بی آرآء ممالک میں اعلی تعلیمی اداروں کے مابین مضبوط تعلیمی ، تحقیقی اور اختراعی روابط ہونا چاہئے مضبوط تعلیمی روابط بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کو مضبوط بنائیں گے،انہوں نے کہا کہ مضبوط تعلیمی روابط کے ذریعہ بی آر آئی منصوبے کے فوائد سے فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے، تفصیلات کے مطابق بی آر آئی فورم کے بانی آصف نور نے ویبینار کے شرکا ء کوفورم کے قیام کی اہمیت سے آگاہ کیا،پروفیسر ڈاکٹر وانگ لی پروفیسرنے کہا کہ چین ، روس ، پاکستان اور ایران کے مابین مضبوط تعاون کے ذریعے خطے میں امن اور استحکام بحال ہوسکتا ہے،اس سے بی آر آئی کے ساتھ تعاون کو بھی فروغ مل سکتا ہے،بیلٹ اینڈ روڈ انٹرنیشنل سائنس ایجوکیشن کوآرڈینیٹنگ کمیٹی کے نائب صدر ڈاکٹر منظور سومرو نے کہا کہ چین کے بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے سے منسلک ممالک کو سائنس اور تکنیکی ترقی پر مضبوط تعلیمی اور تحقیقی روابط پیدا کرنے کی ضرورت ہے،فرانس کے ڈاکٹر جارج نے کہا کہ چین اور یورپی یونین تمام شعبوں میں مضبوط روابط کو فروغ دینے کے لئے تعاون کر سکتے ہیں،چین کی جیانگ یونیورسٹی میں پبلک افیئرز پروگرام کے پروفیسر ڈاکٹر ہانگ می نے کووڈ19 وبا سے نمٹنے کے لئے سائنسدانوں اور ماہرین تعلیم کے مابین مضبوط شراکت کی ضرورت پر زور دیا،قازقستان کے پروفیسر ڈاکٹر زولداسبیکووانے کہاکہ بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کا حصہ ہوتے ہوئے قازقستان اور چین کے مابین خصوصا تعلیمی اور سائنسی روابط کیلئے مضبوط شراکت ضروری ہے۔ویبینار سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر شہید بے نظیر بھٹو ویمن یونیورسٹی نے کہا کہ طلبا کو جدت اور وظائف اور اساتذہ کے تبادلے کے ذریعے یونیورسٹیوں میں مزید تعاون کرنے کی ضرورت ہے ،ایران کے سینٹر برائے چائنا اسٹڈیز کے سربراہ ڈاکٹرگولمالی نے بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے میں شامل ممالک کے لئے یونیورسٹیوں اور ایچ ای آئی کا ایک نیٹ ورک بنانے کا خیال پیش کیا تاکہ وہ بی آر آئی منصوبے کی فعالیت کے لئے کردار ادا کرسکیں،پروفیسر ژو رونگ نے کہا کہ بیلٹ اینڈ روڈ ممالک کے ماہرین تعلیم کے مابین مزید لٹریچر ، سائنسی علوم کی تحقیق و تعاون کی ضرورت پر زور دیا، ویبینار کے دوران افغانستان کی کردان یونیورسٹی کے شعبہ معاشیات کے سربراہ قیس محمدی نے کہا کہ افغانستان میں بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کے مجموعی مقاصد کے لئے معنی خیز تعاون کرنے کی بہت بڑی صلاحیت ہے۔