چین کی تیارکردہ اینٹی کوویڈ-19 ادویات کی انسانوں پر آزمائش کا آغاز

چین کے شمال مغربی خودمختار خطے ننگ شیا ہوئی کے شہر ین چھوآن میں نیوکلیک ایسڈ ٹیسٹنگ سائٹ پر طبی اہلکار سواب کے ذریعے ایک شخص کا نمونہ لینے میں مصروف ہے۔(شِنہوا)

شنگھائی(شِنہوا) چین کی ایک ادویہ ساز کمپنی کی تیار کردہ کوویڈ-19کی دو اینٹی وائرل ادویات کی بیرون ملک انسانوں پرطبی آزمائش شروع ہوگئی ہے۔

 چین کی اکیڈمی آف سائنسز (سی اے ایس) کے تحت کام کرنے والے شنگھائی انسٹی ٹیوٹ آف میٹیریا میڈیکا نے اپنی تیار کردہ، وی وی 116 کوڈ نیم  کی اینٹی کوویڈ-19 اورل نیوکلیوسائیڈ دوائی کے حوالے سے بتایا کہ اس کے جانوروں پر کیے گئے آزمائشی تجربات کے حوصلہ افزا نتائج سامنے آئے ہیں۔ اس دوائی نے کوویڈ-19 کے بنیادی وائرس اور اس کی ڈیلٹا جیسی اقسام کی روک تھام میں اہم کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

انسٹی ٹیوٹ کے ایک محقق، شین جِنگشان نے بتایا کہ وی وی 116کے  پہلے ازبکستان میں کلینیکل ٹرائلز کی  منظوری دی گئی تھی، انہوں نے مزید کہا کہ چین میں بھی  انسانوں پر اس دوائی کی آزمائش کی جاری ہے۔

 ایف بی 2001 کے نام سے دوسری دوائی ایک نیا کمپاؤنڈ ہے جسے کورونا وائرس کے مرکزی پروٹیز کی بنیاد پر ڈیزائن اورمرتب کیا گیا ہے جو وائرس کے پھیلاو میں بنیادی کردار ادا کرنے والا ایک اہم انزائم ہے۔