چین سبز سرمایہ کاری میں تیز رفتار ترقی دیکھے گا، رپورٹ

بیجنگ (شِنہوا) چین  میں بتدریج  کم کاربن استعمال کے مزید ادارہ جاتی مرحلے کی جانب   پیشرفت کے بعد مزید سبز سرمایہ کاری متوقع ہے۔

مورگن اسٹینلے کی چیف  چائنہ ماہر معیشت  رابن ژنگ نے  ایک مشترکہ  تحقیقاتی  رپورٹ میں کہا ہے کہ  ہم توقع کرتے ہیں کہ پالیسی ساز 2022  کے بعدسے قابل تجدید ذرائع، سمارٹ گرڈ، پاور اسٹوریج  کے سامان، اور مینوفیکچرنگ آلات کی اپ گریڈیشن جیسے سبز سرمایہ کاری کے لیے  اپنی حمایت میں اضافہ کریں گے  ۔

توقع ہے کہ یہ  سبز  محرک  چینی معیشت میں نئی تحریک پیدا کرے گا، سرمایہ کاری بینک نے سبز سرمایہ کاری سے چلنے والے بنیادی ڈھانچے میں بحالی کی پیش گوئی کی ہے اور توقع ظاہر کی ہے کہ اگلے سال بنیادی ڈھانچے کی  سرمایہ کاری میں اضافہ  4 فیصد تک بحال جائے گا۔

رپورٹ کے مطابق مینوفیکچرنگ  میں سرمایہ کاری کی طلب بڑھنے  کی بھی پیش گوئی کی گئی ہے جس کی وجہ مینوفیکچررز کی جا نب سے اپنے آلات کو اپ گریڈ کر نا ہے  تاکہ  توانائی کی کار گزاری کو بہتر بنایا جاسکے ۔

یہ تخمینے ایسے موقع پر سامنے آئے ہیں جب  چین نیلے آسمانوں کے لیے لڑنے  بارے کاربن کے اخراج میں کمی کر رہا ہے اور موسمیاتی تبدیلی کے اثرات کو کم کرنے کے لیے مسلسل کوششوں  میں مصروف ہے ۔