چائنہ تھری گارجزکارپوریشن نے اپنا صدرمقام ووہان منتقل کردیا

ووہان(شِنہوا)چائنہ تھری گارجز کارپوریشن(سی ٹی جی) نے  اپنا صدرمقام بیجنگ سے چین کے وسطی صوبہ ہوبے کے صدرمقام ووہان منتقل کردیا ہے۔

توقع کی جارہی ہے کہ اس اقدام سے دریائے یانگسی اقتصادی پٹی کی قومی حکمت عملی اور ہوبے، خاص طور پر ووہان میں وبا کے بعد معاشی بحالی میں تیزی آئے گی۔

کارپوریشن نے  ووہان میں منعقدہ ایک تقریب میں ہوبے کے ووہان کی حکومت کے علاوہ یی چھانگ شہرکے ساتھ اسٹریٹجک تعاون کے معاہدے پر دستخط کئے جہاں پر تھری گارجز ڈیم موجود ہے، اس میں 154بڑے منصوبے  شا مل ہیں جن کی کل مالیت364.5ارب یوآن (تقریباً56.4 ارب امریکی ڈالرز) ہے۔

کارپوریشن کے چیئرمین لی مِنگ شان نے کہاکہ کارپوریشن ہوبے میں مرکز  بناکر صوبہ میں بعداز وبا بحالی میں مدد کرے گی اور اہم قومی حکمت عملی کی بہتر خدمت کرے گی۔

1993میں قائم ہونے والی چائنہ تھری گارجز  قبل ازیں تھری گارجز منصوبہ کی تعمیر کی وجہ سے  عام طور پر چائنہ تھری گارجز پراجیکٹ کارپوریشن کے طور پر جانی جاتی تھی۔اب یہ دنیا بھر میں ہائیڈرو پاور ڈویلپمنٹ اور آپریشن انٹرپرائز اور چین میں صاف توانائی کا سب سے بڑا گروپ بن چکا ہے۔