چین کا شہر ژہینگ ژو کس طرح کوویڈ-19 کا مقابلہ اور روزمرہ اشیائے ضرورت کی فراہمی یقینی بنا رہا ہے

گلوبل لنک|چین کا شہر ژہینگ ژو کس طرح کوویڈ-19 کا مقابلہ اور روزمرہ اشیائے ضرورت کی فراہمی یقینی بنا رہا ہے

وسطی چین کے شہر ژینگ ژو میں دوبارہ سے سر اٹھانے والی کوویڈ-19 کی وباء کو روکنے کے لیے عوامی سطح پر نیوکلیائی ایسڈ ٹیسٹنگ کا سلسلہ جاری ہے۔

صوبہ ہینان کے دارالحکومت کے کئی علاقوں کو عوامی آمدورفت کے لیے بند کرنے کے علاوہ متعدد اہم شہری اضلاع میں پابندیوں کا نفاذ کیا گیا ہے۔

ہم دن میں ایک مرتبہ نیوکلیک ایسڈ ٹیسٹ کرواتے ہیں۔ اس سے ہمیں ایک طرح کے تحفظ کا احساس ہوتا ہے۔

ہماری روزمرہ کی زندگی پر زیادہ اثر نہیں پڑا۔ میرے خیال میں ہمیں کوویڈ-19 کے خلاف پورے ملک اور اپنے علاقہ کی مدد کرنے کے لیے انسداد وباء کے قواعدوضوابط کی ہر ممکن پاسداری کرنا چاہیے۔

ہینان کے 14 شہروں سے تقریباً 8 ہزار طبی کارکنان ٹیسٹنگ کے عمل میں مدد کے لیے فوری طور پر ژینگ ژو پہنچے ہیں۔

ہم نرسیں دن رات کام کر رہی ہیں۔ ہم تیز رفتاری سے کام کرتے ہوئے بھی کوویڈ ٹیسٹ کے لیے نمونے باقاعدہ معیار کے مطابق حاصل کرتے ہیں۔

وبائی روک تھام کے مقامی ضابطوں کے تحت ہر خاندان کے ایک فرد کو گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کیے گئے کوویڈ نیوکلیک ایسڈ ٹیسٹ کی منفی رپورٹ کے ساتھ ہر روز سودا سلف لینے کے لیے گھر سے باہر نکلنے کی اجازت ہے۔

ہم نے کچھ چاول، آٹا اور تیل تیار کیا ہے۔ ہمارے لیے سب کچھ اچھا ہے۔ اب جب کہ میں کوویڈ-19 کے دوران گھر پر ہوں، تو مجھے بچوں کے لیے ہر قسم کے لذیذ پکوان تیار کرنے کا موقع مل جاتا ہے۔ بچے اِس پر بہت خوش ہیں۔

اِس سے پہلے ہم دن میں ایک مرتبہ سٹور میں سامان پُورا کرتے تھے۔ مگر اب ہم صارفین کو ضروریات کو پُورا کرنے کے لیے صبح اور پھر سہ پہر میں ایسا کرتے ہیں۔

ژہینگ ژو میں روزمرہ ضرورت کی اشیاء کی فراہمی یقینی بنانے کے لیے ایک ہنگامی منصوبہ شروع کرتے ہوئے 10 ہزار سے زیادہ ٹرانسپورٹ گاڑیوں کے پرمٹ جاری کیے گئے ہیں۔