اقوام متحدہ نے صومالیہ کے ساحلوں کے قریب بحری قذاقی کے خلاف اپنے مینڈیٹ میں توسیع کردی

اقوام متحدہ(شِنہوا) اقوام متحدہ (یو این) کی سلامتی کونسل نےبحری قزاقی سے نمٹنے کے لیے صومالیہ کے ساتھ  دیگر ممالک اور علاقائی تنظیموں کے تعاون  کے لیے اپنے مینڈیٹ کی تجدید کرتے ہوئے اس میں مزید تین ماہ کی توسیع کردی ہے۔

قرارداد 2608 کو متفقہ طور پر منظور کرتے ہوئے، کونسل نے فیصلہ کیا کہ قرارداد کی تاریخ سے آگے مزید تین ماہ مینڈیٹ میں  توسیع کی گئی ہے،جس کی رو سے صومالیہ کے ساحلوں کے قریب بحری قزاقی اورمسلح ڈکیتی کی وارداتوں کے خلاف جنگ میں قرارداد 2554 کے تحت صومالی حکام کے ساتھ تعاون کرنے والی ریاستوں اور علاقائی تنظیموں کو دیے گئے اختیارات کی تجدید کی گئی ہے، تعاون کی ان کارروائیوں کے لیے صومالی حکام اقوم متحدہ کے سیکرٹری جنرل کو پیشگی اطلاع فراہم کرتے ہیں۔

سلامتی کونسل کا کہنا ہے کہ گزشتہ 12 ماہ میں صومالیہ کے ساحلوں پر بحری قزاقی کا کوئی کامیاب حملہ نہیں ہوا اور یہ کہ بحری قزاقی کے انسداد کی مشترکہ کوششوں کے نتیجے میں 2011 سے بحری قزاقوں کے حملوں اور ہائی جیکنگ کی کارروائیوں میں مسلسل کمی آئی ہے اور مارچ 2017 کے بعد سے تاوان کے لیے بحری جہازوں کے اغوا کا کوئی کامیاب واقعہ رونما  نہیں ہوا۔