چین میں بجلی کمپنی کے سابق نائب جنرل منیجر پر رشوت خوری کا الزام عائد

بیجنگ(شِنہوا)چین میں بجلی پیدا کرنیوالی ایک بڑی کمپنی چائنہ گودیان کارپوریشن کے سابق نائب جنرل منیجر شیی چھانگ جن کیخلاف رشوت خوری ، طاقت کے ناجائز استعمال اور اپنے رشتہ داروں کیلئے غیر قانونی فوائد حاصل کرنے کے الزامات پر ایک عوامی مقدمہ شروع کر دیا گیا ہے۔

شیی چھانگ جن کے کیس کی تحقیقات قومی سپروائزری کمیشن نے کیں۔ صوبہ ہیبے کے شہر ہان دان میں سپریم پیپلز پروکوریٹوریٹ کے نامزد ایک پروکوریٹوریٹ نے کیس کا جائزہ لیا اور اسے شہر کی انٹرمیڈیٹ پیپلز کورٹ میں دائر کیا ہے۔

استغاثہ نے مدعا علیہ کو اس کے قانونی حقوق سے آگاہ کیا ، اس سے پوچھ گچھ کی اور وکیل صفائی کی رائے سنی۔

فرد جرم میں شیی چھانگ جن پر الزام عائد کیا گیا کہ اس نے بجلی کمپنیوں میں کام کے دوران اپنے عہدوں کا استعمال کرتے ہوئے دوسروں کو فائدہ پہنچایا اور بدلے میں بھاری رشوت وصول کی۔

استغاثہ کے مطابق شیی چھانگ جن نے اپنے عہدوں کا استعمال کرتے ہوئے اپنے رشتہ داروں اور دوستوں کے کاروباری اداروں سے مارکیٹ سے کہیں زیادہ قیمتوں پر سامان خریدا ، جس سے  قومی مفادات کو بھاری نقصان پہنچا۔