کیلیفورنیا جیلوں میں نوول کرونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کےلئے 8 ہزار قیدیوں کو رہا کریگا

لاس اینجلس (شِنہوا) کیلیفورنیا کے محکمہ اصلاحات و بحالی ( سی ڈی سی آر) نے جمعہ کے روز اعلان کیا ہے کہ نوول کرونا وائرس کا پھیلاؤ کم کرنے کے منصوبے کے تحت اگست کے آخر تک ریاستی جیلوں میں بند زیادہ سے زیادہ 8 ہزار قیدیوں کو اگست کے آخر تک رہا کیا جا سکتا ہے۔

سی ڈی سی آر کی طرف سے جاری کردہ ایک پریس ریلز میں محکمہ نے کہا کہ اضافی کارروائیوں کا مقصد اپنی سب سے کمزور آبادی اور عملے کو نوول کرونا وائرس سے بچانا اور ریاستی جیلوں میں جسمانی فاصلہ ، الگ تھلگ اور قرنطینہ کی کوششوں کو عملی جامہ پہنانے کےلئے زیادہ سے زیادہ جگہ فراہم کرنے کی اجازت دینا ہے۔

سی ڈی  سی آر نے یہ بھی انکشاف کیا کہ اس کی تنصیبات میں نوول کرونا وائرس کی منتقلی کے خطرے کو کم کرنے کے لئے گزشتہ وبائی ہنگامی صورتحال کو ختم کرنے کی کوششوں سے نظام میں آباد قیدی آبادی میں تقریباً 10 ہزار کی کمی واقع ہوئی ہے۔

یہ اقدام جمعرات کے روز کیلیفورنیا کے گورنر کے اس انتباہ کے بعد اٹھایا گیا جس میں کہا گیا ہے کہ شمالی کیلیفورنیا میں واقع سان کوینٹن جیل میں بیماری کا پھیلاؤ حکام کے لئے اس مہلک بیماری کےخلاف جنگ میں سب سے بڑی تشویش بن گیا ہے۔

محکمہ کے اعداد و شمار کے مطابق سان کوینٹن جہاں تقریباً 4 ہزارکے قریب عملہ کے اراکین اور قیدی رہتے ہیں میں جیلوں کے نظام میں سب سے زیادہ 1ہزار 336 کیسز اور 7 اموات رپورٹ ہوئی ہیں اور گزشتہ دو ہفتے کے دوران 506 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

سی ڈی سی آر کے مطابق جمعہ کی شام تک 31 اموات اور قید میں موجود 2 ہزار 319 فعال کیسز کے ساتھ محکمہ میں تقریباً 5 ہزار 850 کیسز کی تصدیق ہو چکی ہے۔