چین کا دریائے نیل پر ڈیم کے تنازع کا پرامن حل نکالنے پر زور

اقوام متحدہ(شِنہوا) چین کے مندوب نے دریائے نیل پر بڑے ایتھوپین حیات نو ڈیم پر مصر، ایتھوپیا اور سوڈان کے درمیان تنازع کا پر امن حل نکالنے پر زور دیا ہے۔

سرحد پار آبی وسائل کے استعمال میں دریاکے بہاؤ کےخلاف اور دریاکےبہاؤ کی طرف والےممالک کےمابین مفادات کی تقسیم شامل ہے اور اسی وجہ سے یہ انتہائی پیچیدہ اور حساس معاملہ ہے،اقوام متحدہ میں چین کے قائم مقام نائب مستقل نمائندے یاؤ شاؤ جون نے کہاہے کہ چین کا موقف ہے کہ باہمی مفاد کیلئے اسے تینوں فریقوں میں مذاکرات اور مشاورت کے ذریعے حل ہونا چاہیے۔

یاؤ نے سکیورٹی کونسل کو بتایا کہ افریقی ممالک میں علاقائی مسائل مذاکرات اور مشاورت سے حل کرنے کی اچھی روایت موجود ہے، مصر، ایتھوپیا اورسوڈان خطے کےاہم ممالک ہیں اور چین کے اچھے دوست ہیں،انہوں نے کہاکہ چین صدق دل کے ساتھ پرامید ہے کہ تینوں فریقین صبروتحمل کے ساتھ مذاکرات اور مشاورت کے ذریعے سب کیلئے قابل قبول حل نکال لیں گے۔

انہوں نے کہا کہ چین پرامید ہے کہ بین الاقوامی برادری بہترین بیرونی ماحول پیدا کرے گی اور افریقہ میں امن واستحکام اور ترقی برقرار رکھنے کی کوششوں میں مذاکرات اور مشاورت کے ذریعے تینوں فریقین کو اپنے اختلافات کم کرنے کی حمایت کرے گی۔

بڑے ایتھوپین حیات نو ڈیم کی فی الحال تعمیر جاری ہے، یہ ڈیم سوڈان کی سرحد کے ساتھ 15کلومیٹر مشرق کی جانب واقع ہے۔