سعودی زیر قیادت اتحاد نے سرحدی شہر کی جانب بھیجے گئے ڈرونز مار گرائے

(190905) - ریاض ، 5 2019ستمبر ، 2019 (شِنہوا) - 5 ستمبر 2019 کو ریاض ، سعودی عرب کے جنوب میں الخارج کے ایک فوجی مرکز میں ایک مداخلت شدہ حوثی ڈرون دیکھا گیا۔ سعودی قیادت میں اتحاد شامل سعودی پریس ایجنسی کی خبر کے مطابق ، جمعرات کے روز یمن کی ایک جنگ میں حوثیوں کی جانب سے سعودی سرحدی شہر خمیس مشائط کی طرف روانہ کیے گئے ایک ڈرون کو روکا گیا۔ (شِنہوا / ٹو یفان)

ریاض(شِنہوا)یمن کی جنگ میں شامل سعودی زیرقیادت اتحاد نے پیر کے روز اعلان کیا ہے کہ سرحدی شہر خمس مشیط کی جانب بھیجے گئے 2 ڈرونز کو گرا دیا گیا ہے۔

اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے سعودی پریس ایجنسی پر جاری ایک بیان میں کہا کہ تباہ شدہ ڈورنز کو حوثی ملیشیاء  سے عام شہریوں کو نشانہ بنانے کےلئے بھیجا گیا تھا۔

انہوں نے ملیشیاء پر الزام لگایا کہ وہ عام شہریوں کی جانوں کو خطرہ میں ڈال کر روایتی بین الاقوامی انسانی حقوق کی خلاف ورزی کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ ملیشیاء نے 9 اپریل سے اتحاد کی جانب سے نافذ کردہ جنگ بندی کو مسترد کر دیا ہے۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ حوثیوں کی جانب سے 5 ہزار سے زائد مرتبہ جنگ بندی کی خلاف ورزی کی گئی جس میں ہتھیاروں اور میزائلوں کا استعمال شامل ہے۔

جنگ بندی کا فیصلہ اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری کے خصوصی نمائندہ برائے یمن مارٹن گرفتھس کی جانب سے متحارب فریقین کو اپنے ہتھیار ڈالنے کے مطالبے کا حصہ تھا۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ اتحاد حوثیوں کی عسکری صلاحیتوں کو بے اثر بنانے کے لئے تعمیری اقدامات جاری رکھے گا۔

اتحاد نے مارچ میں حوثیوں کیخلاف منتخب یمنی حکومت کی حمایت میں یمن میں جنگ کا پانچواں سال مکمل کیا ہے۔