چین کے ساتھ تعلقات پہلے اتنے اہم نہیں ہوتے تھے،آسٹریلوی ریاستی وزیراعظم

(190425) - میلبرن ، 25 اپریل ، 2019 (شِنہوا) - آسٹریلیائی ریاست ، وکٹوریہ کے وزیر اعظم ڈینیئل اینڈریوز نے 24 اپریل ، 2019 کو آسٹریلیا کے ، میلبورن ، میں شِنہوا کے ساتھ ایک انٹرویو میں خطاب (شِنہوا / بائی زیوفی)

سڈنی(شِنہوا) آسٹریلیا کی ریاست وکٹوریہ کے وزیراعظم ڈینئل اینڈریوز چین کے ساتھ جاری مضبوط تعلقات کو برقرار رکھنے کیلئے پرعزم ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ اس لمحہ سے زیادہ کبھی بھی  اہم نہیں رہے۔

پیرکے روز چینل 7 نیوز سے بات چیت کرتے ہوئے اینڈریوز نے وکٹوریہ کے چین کے ساتھ درجنوں اہم معاہدوں کی نشاندہی کی جو کہ آسٹریلیا کے ہزاروں شہریوں کو ملازمت دینے کے ذمہ دار ہیں۔

اینڈریوز نے کہا کہ ہمارا نقطہ نظر ہے کہ آپ زیادہ تعلقات چاہتے ہیں، کم نہیں۔ آپ اپنے سب سے بڑے  گاہک کے ساتھ بہتر تعلقات چاہتے ہیں، نہ کہ برے تعلقات، یہ سب ملازمتوں سے متعلق ہے۔

2018 میں وکٹوریہ آ سٹریلیا کی پہلی ریاست بنی جس نے چین کے تجویز کردہ بیلٹ اینڈ روڈ انیشیٹو کی حمایت کی اور مفاہمت کی یاد داشت پر دستخط کئے۔ اس اقدام کی اینڈ ریوز نے 2019 میں ایک مزید معاہدے پر دستخط  کر کے توثیق کی۔

اینڈریوز کے مطابق ان کی سربراہی کے دوران ریاست کی مقامی سطح پر تیار اور پیدا کی گئی مصنوعات کی چین کو برآمدات کی مقدار میں 62فیصد تک اضافہ ہواہے۔

اینڈریوز نے کہا کہ اس طرح کی برآمدات، اس طرح کی تجارت، اس طرح کی سرمایہ کاری کبھی بھی اتنی اہم نہیں تھی کیونکہ ہم نوول کروناوائرس سے گزر رہے ہیں اور ہم نقصان کا ازالہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں کیونکہ ہمارے پاس عوامی صحت کے تحفظ کے علاوہ کوئی اور راستہ نہیں تھا۔