بوکو حرام کے 20 عسکریت پسندوں کو ہلاک کر دیا گیا، نائیجیریا

ابوجہ(شِنہوا)نائیجیریا کے شمال مشرقی قصبے باگا میں سرکاری فوجیوں سے فائرنگ کے تبادلے کے بعد 20 بوکو حرام عسکریت پسند مارے گئے ہیں، یہ بات فوج کے ترجمان جوہن ایننچی نے پیر کے روز بتائی۔

ترجمان نے کہا کہ شمالی ریاست بورنو میں بوکو حرام کے حملوں کا متواتر نشانہ بننے والی جگہ باگا میں اتوار کے روز ہونیوالے تصادم میں 9 سرکاری فوجی زخمی ہوئے ہیں۔

ایننچی نے کہا کہ مارٹرز ، راکٹ سے چلنے والے گرنیڈز اور چھوٹے ہتھیاروں سے مسلح بوکو حرام عسکریت پسند باگا میں دیہات پر حملہ کرنے جا رہے تھے جب فوجیوں نے زبردست فائرنگ کرکے ان کے قافلے کو روک لیا۔

2009 کے بعد سے بوکو حرام شمال مشرقی نائیجیریا میں اسلامی ریاست کے قیام کی کوششیں کر رہی ہے اور اپنے حملوں کو چاڈ جھیل طاس کے ممالک تک پھیلا دیا ہے۔

اقوام متحدہ کے مطابق اس گروپ کی وجہ سے چاڈ ، کیمرون ، بینن اور نائجیر  سمیت چاڈ جھیل طاس میں بھی سیکیورٹی ، انسانیت پسندی اور حکمرانی کے بہت سارے چیلنجز درپیش ہیں۔