امن وامان اور پاکستان میں موجود چینی شہریوں کی سکیورٹی کے حوالے سے اہم اجلاس

اسلام آباد (آئی این پی) وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ چینی شہریوں کی سکیورٹی اولین ترجیح ہے،اس پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوسکتا،داسو ڈیم اور کراچی یونیورسٹی دہشت گردی کے واقعات انتہائی افسوسناک ہیں،دہشت گردی واقعات میں چینی شہریوں کے جانوں کے ضیاع پر پوری پاکستانی قوم کو افسوس ہے،محکمہ انسداد دہشتگردی پنجاب کی طرز پر دیگر صوبوں میں ادارے قائم کیے جائیں گے، ملک میں پائیدار امن کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائیں گے، وزیر داخلہ نے ان خیالات کا اظہار جمعہ کو ملک میں امن وامان اور پاکستان میں موجود چینی شہریوں کی سکیورٹی کے حوالے سے اہم اجلاس کی صدارت کے دوران کیا ، امن و امان کے حوالے سے وزارت داخلہ میں منعقدہ اجلاس وزیراعظم شہباز شریف کی خصوصی ہدایت پر بلایا گیا تھا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ دہشت گردی واقعات کے سد باب کیلئے انسداد دہشت گردی کے محکموں کوجدید بنایا جائے گا،محکمہ انسداد دہشتگردی پنجاب کی طرز پر دیگر صوبوں میں ادارے قائم کیے جائیں گے،محکمہ انسداد دہشت گردی تعینات عملے کو بہترین تنخواہیں اور مراعات دی جائیں گی، وفاقی سیکریٹری داخلہ یوسف نسیم کھوکھر سمیت وزارت داخلہ کے اعلی حکام اجلاس میں موجود تھے۔ چاروں صوبوں،آزاد جموں وکشمیراورگلگت بلتستان کے چیف سیکریٹریز اورآئی جی پولیس نے اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس میں چیئرمین نادرا، نیشنل کوآرڈینیٹر نیکٹا، چیف کمشنر و آئی جی اسلام آباد اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے نمائندوں نے شرکت کی۔ اجلاس کا مقصد ملک بھر میں امن وامان کی صورت حال کو یقینی بنانے کے حوالے سے اقدامات کاجائزہ لینا تھا۔پاکستان میں موجود چینی شہریوں کی فول پروف سکیورٹی کیلئے اقدامات کوحتمی شکل دینا بھی اجلاس کے ایجنڈے میں شامل تھا۔

اجلاس میں شریک شرکاء سے خطاب میں وزیر داخلہ نے کہا کہ یکٹا کو مکمل فعال بنایا جائے۔نیکٹا ملک سے دہشت گردی ختم کرنے کیلئے انتہائی موثر ادارہ ثابت ہوسکتاہے، انہوں نے شرکاء کو ہدایت کی کہ دہشت گردی واقعات کے سد باب کیلئے انسداد دہشت گردی کے محکموں کوجدید بنایا جائے۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ چینی شہریوں کی سکیورٹی اولین ترجیح ہے۔اس پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوسکتا،داسو ڈیم اور کراچی یونیورسٹی دہشت گردی کے واقعات انتہائی افسوسناک ہیں،دہشت گردی واقعات میں چینی شہریوں کے جانوں کے ضیاع پر پوری پاکستانی قوم کو افسوس ہے،محکمہ انسداد دہشتگردی پنجاب کی طرز پر دیگر صوبوں میں ادارے قائم کیے جائیں گے،محکمہ انسداد دہشت گردی تعینات عملے کو بہترین تنخواہیں اور مراعات دی جائیں گی،محکمہ انسداد دہشت گردی کا ملکی امن و امان میں اور دہشت گردی واقعات روکنے میں کردار کلیدی ہے،وفاق اور صوبوں کے درمیان سکیورٹی کے حوالے سے کوارڈینیشن کو موثر بنانے کی ضرورت ہے،وفاق چاروں صوبوں، آزاد جموں وکشمیر اورگلگت بلتستان حکومتوں کو تمام ضروری وسائل فراہم کرینگے ۔

انہوں نے کہا کہ غیر ملکی شہریوں کی حفاظت کیلئے وزارت داخلہ میں خصوصی سیل قائم کیا گیا ہے۔ فارن نیشنل سکیورٹی سیل صوبائی حکومتوں کے درمیان کوارڈینیشن کریگا، وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ ملک میں پائیدار امن کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائیں گے۔