معین الحق کی چینی تاجروں کو پاکستان میں سی پیک کے تحت خصوصی اقتصادی زونز میں سرمایہ کاری کی دعوت

معین الحق کی چینی تاجروں کو پاکستان میں سی پیک کے تحت خصوصی اقتصادی زونز میں سرمایہ کاری کی دعوت
معین الحق کی چینی تاجروں کو پاکستان میں سی پیک کے تحت خصوصی اقتصادی زونز میں سرمایہ کاری کی دعوت

چین جیسی اقتصادی ترقی کو پاکستان منتقل کرنے کیلئے اپنی اقتصادی صلاحیت بہتر بنا رہے ہیں ، تجارت میں اضافے کیلئے نیا آزادنہ تجارت کامعاہدہ بہت ضروری ہے، آنے والے وقت میں پاک چین تجارت میں مذید اضافہ ہو گا، دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر میں چینی کمپنیوں کے تعاون کے شکرگزار ہیں، چین اور پاکستان مل کر نئے برانڈ آٹوموبائل بنانے کے لئے کام کر رہے ہیں، چین میں پاکستان کے سفیر معین الحق کا چینی اخبار کو انٹرویو
بیجنگ(آئی این پی) چین میں پاکستان کے سفیر معین الحق نے چین کے تاجروں کو پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک)کے تحت قائم کیے جانے والے خصوصی اقتصادی زونز میں سرمایہ کاری کے مواقع سے فائدہ اٹھانا چائیے۔چین جیسی اقتصادی ترقی کو پاکستان منتقل کرنے کیلئے اپنی اقتصادی صلاحیت بہتر بنا رہے ہیں ، تجارت میں اضافے کے لئے نیا فری ٹریڈ ایگریمنٹ ( ایف ٹی اے) بہت ضروری ہے، آنے والے وقت میں پاک چین تجارت میں مذید اضافہ ہو گا، دیامر بھاشا ڈیم کی تعمیر میں چینی کمپنیوں کے تعاون کے شکرگزار ہیں، چین اور پاکستان مل کر نئے برانڈ آٹوموبائل بنانے کے لئے کام کر رہے ہیںپاکستان نے سی پیک کے تحت بننے والے 9خصوصی اقتصادی زون کی نشاندہی کی ہے جن میں سے تین خصوصی اکنامک زونز مکمل ہونے کو ہیں، چینی اخبار چائنہ اکنامک نیٹ (سی ای این)کو انٹرویو دیتے ہوئے پاکستانی سفیر معین الحق نے کہا کہ اس حوالے سے تمام تر تفصیلات جلد شیئر کی جائیں گی معین الحق کا کہنا تھا کہ پاکستان حالیہ برسوں میں چین جیسی اقتصادی ترقی کو پاکستان میں منتقل کرنے کیلئے اپنی اقتصادی صلاحیت بہتر بنانے کی جانب گامزن ہے چینی کمپنیاں بھی پاکستان کے خصوصی اکنامک زونز میں ترجیحی پالیسیوں کے نفاذ پر مستقل توجہ دے رہی ہیں اس سلسلے میں ہم نے خصوصی اقتصادی زون تیار کرنے کے چینی تجربے سے بہت کچھ سیکھا ہے پاکستانی سفیر نے کرونا وبا کے دوران پاک چین تجارتی تعلقات پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چین نے دوسری سہ ماہی میں ایک بہت ہی مثبت اور 3 فیصد سے زیادہ ترقی کی ہے جو کہ ہمارے لئے خوشی کی بات ہے اس وبائی بیماری کے باوجود اس سال کی پہلی سہ ماہی میں ہم نے اپنے دوطرفہ تجارت میں اضافہ دیکھا ہے گو کہ دوسری سہ ماہی میں ، بین الاقوامی نقل وحرکت پر پابندی کی کی وجہ سے تجارت میں تھوڑی کمی واقع ہوئی، تجارت میں اضافے کے لئے نیا فری ٹریڈ ایگریمنٹ ( ایف ٹی اے) بہت ضروری ہے انہوں نے کہا کہ ماہی گیری اور ادویہ سازی سمیت 300 سے زیادہ اشیا کی اب ایک ملک سے دوسرے ممالک میں ڈیوٹی فری رسائی سے دنیا فائدہ اٹھا رہی ہے لہذا دونوں ممالک کے تاجروں کے لئے اس شعبے میں کام کرنے کے بہت سے مواقع موجود ہیں،ہم امید کرتے ہیں کہ آنے والے مہینوں اور سالوں میں پاک چین باہمی تجارت میں اضافہ ہو گا، پاکستانی سفیر نے کہا کہ کرونا وباکے دوران چین کی پاکستان کو فراہم کردہ مدد ہمارے لئے حوصلہ افزاء تھی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے چینی صدر شی جن پنگ کے اس اعلان کو سراہا کہ جب بھی کوئی ویکسین تیار کی جاتی ہے ، تو یہ عوام کی بھلائی سمجھی جاتی ہے انہوں نے کہا ، پاک چین تعلقات کا دائرہ کار بہت وسیع اور بہت گہرا ہے ، معین الحق نے کہا کہ پاکستان اور چین دفاع سے لے کر سلامتی ، تجارت سے لے کر سرمایہ کاری ، ثقافت ، تعلیم ، سائنس اور ٹیکنالوجی ، زراعت ، اور سیاحت تک ہر شعبے میں تعاون کرتے ہیں۔ سی پیک ہمارے تعلقات کا ایک بہت اہم عنصر ہے، سی پیک دوسرے مرحلے میں صنعتی ترقی تعاون ہماری موجودہ حکومت کے سماجی و اقتصادی ترقی کے ایجنڈے کے ساتھ بھی مطابقت رکھتا ہے لہذا یہ بہت اہم شعبے ہوں گے جن پر میں اپنی مدت ملازمت کے دوران کام کروں گا، معین الحق نے کہا کہ دیامر بھاشا ڈیم وزیر اعظم عمران خان کے وژن کاایک حصہ ہے جس سے ہمارے ملک کو ایک صاف اور سستی توانائی فراہم ہوگی اس ڈیم کی تعمیر میں ہم چینی کمپنیوں کے تعاون کے شکرگزار ہیں جنہوں نے اس ڈیم کی تعمیر میں پیش پیشی کی۔انہوں نے کہا کہ ایم ایل ون منصوبہ سی پیک کے تحت پاکستان میں بننے والا سب سے بڑا منصوبہ ہے۔ یہ پاکستان اور چین دونوں کے لئے ایک بہت اہم منصوبہ ہے۔ اس سے پاکستان میں بہت سستا اور موثر اندرون ملک سفر کرنے میں مدد ملے گی، پاکستانی سفیر کا کہنا تھا کہ چین اور پاکستان مل کر نئے برانڈ آٹوموبائل بنانے کے لئے کام کر رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ پاکستان کی آئی ٹی ایپلی کیشنز سمیت بہت سے پاکستانی فیشن پروڈکٹ دنیا بھرمیں بہت مشہور ہیںچین میں نیٹ سول جیسی کمپنی کا بہت بڑا کاروبار ہے، معین الحق نے کہا کہ پاکستان دودھ کی پیداوار میں تیسرا یا چوتھا بڑا ملک ، پاکستان ویلیو ایڈڈ مصنوعات مثلا پنیر ، مکھن ، دہی اور دیگر میں نئی سرمایہ کاری کررہا ہے۔