کسی بیرونی ملک کو ہانگ کانگ کے معاملات میں مداخلت کا حق نہیں ، چین نے واضح کر دیا

پیرس(آئی این پی/شِنہوا) چین نے ہانگ کانگ کے معاملات میں غیر ملکی مداخلت اور تشدد کی زبردست مذمت کی ہے چین کے وزیر خارجہ وانگ ای نے اپنے دورہ فرانس کے دوران ایک انٹرویو میں کہا کہ اس معاملے کا تعلق چین کے ا ندرونی معاملات سے ہے کیونکہ ہانگ کانگ چین سے تعلق رکھتا ہے،اقوام متحدہ کے منشور کے مطابق کسی ملک کو بھی کسی دوسرے ملک کے اندرونی معاملات طے کرنے کا کوئی حق حاصل نہیں ہے ،وزیر خارجہ نے کہا کہ بنیادی بات یہ ہے کہ چین کے شہر میں آج تک جو کچھ ہو رہا ہے یہ کوئی پر امن احتجاج نہیں ہے بلکہ صرف اور صرف تشدد ہے بعض شر پسند عناصر ایک طرح کے کپڑے اور نقاب پہنے ہاتھوں میں لوہے کے راڈ اٹھائے جرائم کا ارتقاب کر رہے ہیں ،وزیر خارجہ نے الزام لگایا کہ مظاہرین دوکانوں ، شہری سہولتوں، بے گناہ شہریوں ، ہوائی اڈوں، پولیس اور دیگر نجی اور سرکاری املاک کو نقصان پہنچا رہے ہیں یہ جرائم ہے جن کو کسی طرح بھی کوئی ملک اور معاشرہ برداشت نہیں کر سکتاانہوں نے کہا ہانگ کانگ نے ہمیشہ قانون کی حکمرانی کی بات کی ہے اور یہاں ہر عمل قانون کے دائرے میں ہونا چاہئے اور کئی مسئلہ بھی شدد کا جواز اور بہانہ نہیں بن سکتا۔