ڈبلیو ایچ او کی ممالک سے بیدار ہونے اور نوول کروناوائرس پر قابو پانے کی اپیل

سوئٹزرلینڈ کے شہر جینیوا میں عالمی صحت ادارے (ڈبلیو ایچ او) کے صحت ایمرجنسی پروگرام کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر مائیکل ریان(بائیں) پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے ہیں۔(شِنہوا)

جینیوا(شِنہوا) عالمی صحت ادارے (ڈبلیو ایچ او) نے نوول کروناوائرس کی بیماری سے متاثرہ ممالک کو عالمی وبا کی زمینی صورتحال پر بیدار ہونے اور وائرس کے پھیلاؤ کو قابو میں رکھنے کی اپیل کی ہے۔

ڈبلیو ایچ او کے ایمرجنسی ڈائریکٹر مائیکل ریان نے جمعہ کے روز نامہ نگاروں کو بتایا کہ لوگوں کو بیداری کی ضرورت ہے اعدادوشمار جھوٹ نہیں بول رہے ۔ زمینی صورتحال جھوٹ نہیں بول رہی ہے۔

اب تک نوول کروناوائرس کی بیماری نے دنیا بھر میں کم از کم 1 کروڑ 10 لاکھ لوگوں کو متاثر کیا ہے اور 1 لاکھ 29 ہزار سے زیادہ افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔امریکہ سب سے زیادہ متاثرہ خطہ ہے جہاں زیادہ تر کیسز اور اموات درج ہیں۔

یہ بیان کرتے ہوئے کہ بہت سے ممالک اعداد وشمار کے ذریعے ان کی بتائی ہوئی باتوں کو نظر انداز کر رہے ہیں، ڈبلیو ایچ او کے عہدیدار نے کہا کہ اس وبا پر قابو پانے میں ابھی دیر نہیں ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ کافی زیادہ  اقتصادی ضروریات ہیں جن کی وجہ سے ممالک کو اپنی معیشتوں کو بحال کرنا چاہیے۔ یہ بات قابل فہم ہے مگر آپ اس مسئلے کو نظر انداز نہیں کر سکتے ۔ مسئلہ جادوئی طور پر حل نہیں ہو گا۔