چین امریکی وزیرخارجہ کے سنکیانگ سے متعلق الزامات کی سختی سے تردید کرتا ہے:ترجمان

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو امریکی دارالحکومت واشنگٹن ڈی سی میں پریس بریفنگ دیتے ہوئے۔(شِنہوا)

بیجنگ (شِنہوا) چینی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہاہے کہ چین  امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کے سنکیانگ کے حوالے سے چین کی پالیسی پر بے بنیاد الزمات سے عدم اتفاق اور ان کی سختی سے تردید کرتا ہے۔

وزارت خارجہ کے ترجمان ژاؤ لی جیان نے  جمعہ کو نیوز بریفنگ میں پومپیو کے بیان کومکمل طور پر جھوٹ  قرار دیا جس میں دعوی کیا گیا کہ چینی حکومت سنکیانگ سمیت دیگر علاقوں میں جبری مشقت لے رہی ہے۔

ژاؤ نے کہاکہ چین کی وسیع افرادی قوت کا حصہ ہونے کے ناطے سنکیانگ میں نسلی اقلیتی گروہوں کے کارکنوں کے حقوق اور مفادات کو قانون کے تحت تحفظ فراہم کیا گیا ہے۔ اور یہ کہ  ان کے رسم و رواج،مذہبی عقائد،بولی اور لکھی جانے والی زبانوں کو قانونی تحفظ حاصل ہے۔

ژاؤ نے کہاکہ  امریکہ میں  کچھ افراد کا خیال ہے کہ انہیں سنکیانگ کی نسلی اقلیتوں کی پرواہ ہے لیکن اس کے ساتھ ہی وہ سنکیانگ کے کاروباری اداروں کو دبانے کے لئے ہر طرح کے اقدامات اٹھا رہے ہیں اور یہ تضاد  سنکیانگ کی ترقی کو روکنے اور  چین میں مختلف نسلی گروہوں کے مابین تفرقہ بازی پیدا کرنے  کے لئے ان کی منافقت اور بدنیتی پر مبنی ارادوں کو بے نقاب  کرتا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ ہم امریکہ سے حقائق کا احترام کرنے ، سیاسی جوڑ توڑ روکنے ، دوسروں اور خود کے لئے نقصان دہ باتوں اور کاموں کو روکنے اور سنکیانگ کا استعمال  کرتے ہوئے چینی اور امریکی کمپنیوں کے مابین معمول کے تعاون کو روکنے کے بہانے بند کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

ژاؤ نے کہا کہ چین اپنی  خودمختاری ، سلامتی اور ترقیاتی مفادات کے دفاع کا مضبوط عزم رکھتا ہے اور جو لوگ سنکیانگ میں استحکام اور خوشحالی کو نقصان پہنچانے کی کوشش کر رہے ہیں اور چین کی ترقی کو روکنا چاہتے ہیں وہ کامیاب نہیں ہوسکتے اور نہ ہی کامیاب ہوں گے۔