کمیونسٹ پارٹی آف چائنہ کے خلاف مغربی تنقید کے محرکات سیاسی مقاصد ہیں: تیونس کے سابق عہدیدار

گلوبل لنک | کمیونسٹ پارٹی آف چائنہ کے خلاف مغربی تنقید کے محرکات سیاسی مقاصد ہیں: تیونس کے سابق عہدیدار

تیونس کے سابق وزیر خارجہ احمد ونیس نے اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ مغربی ممالک جمہوریت کا مطلب نہیں سمجھتے اور کہا کہ کمیونسٹ پارٹی آف چائنہ (سی پی سی) کے خلاف مغربی تنقید کے محرکات سیاسی مقاصد ہیں۔

کمیونسٹ پارٹی آف چائنہ (سی پی سی) جو کئی دہائیوں سے اقتدار میں ہے اس کی پالیسیوں کے خلاف مغربی تنقید کے محرکات سیاسی مقاصد ہیں، جو یہ ظاہر کرتا ہے کہ مغربی ممالک جمہوریت کا مطلب اور سی پی سی کے کام کرنے کے طریقوں کو نہیں سمجھتے۔

میں سمجھتا ہوں کہ چین میں، جمہوریت ان معاشی، ثقافتی، سماجی اور دیگر پُرعزم اہداف کو حاصل کرنا ہے جنہیں پورا کرنا ہے۔

مجھے یقین ہے کہ کمیونسٹ پارٹی آف چائنہ (سی پی سی) میں عملدرآمد کی مضبوط صلاحیتیں ہیں۔ یہ ایک طویل مدتی وژن میں منصوبے بناتی ہے۔ منصوبے نہ صرف موجودہ بلکہ طویل مدتی اہداف پر بھی توجہ مرکوز کرتے ہیں۔ سی پی سی اپنے منصوبے بنائے جانے کے بعد ان پر عمل درآمد کے لیے پرعزم رہتی ہے۔

گزشتہ دہائیوں میں چین کے کامیاب تجربات بالخصوص اصلاحات اور کھلے پن اور چار جدیدیت کے حصول کے تجربات نے ثابت کیا ہے کہ چین اپنے مقررہ اہداف کو پورا کر رہا ہے۔ حالیہ دہائیوں میں چین کا سیاسی اور سماجی استحکام بھی ثابت کرتا ہے کہ چین مستحکم ترقی کی راہ پر گامزن ہے۔